Breaking News

Default Placeholder Default Placeholder Default Placeholder Default Placeholder Default Placeholder

The mysterious class
اسکا نام The Cute classہونا چاہیئے تھا ویسے۔ اتنے پیارے پیارے لڑکے اتنے پیارے پیارے کہ اف۔۔ قصہ کچھ یوں ہے
مجھے اچانک ایک نئ ایپ کا پتہ لگا ہائی ٹی وی۔ اچھا اچھا آپکو پتہ ہوگا میں رکوٹین کس ایشین اور نیٹ فلیکس کے درمیان ہی آنکھ مچولی کھیلا کرتی ہوں مگر بد قسمتی سے رکوٹین کی سبسکرپشن ری نیو نہیں کر پائی سو خیر۔ یہاں ملا مجھے نیا ڈرامہ چار بار سامنے آیا اور ہٹا دیا کیونکہ اسکی تفصیل میں جو نام تھے اس سے مجھے چینی ڈرامہ لگا۔ چینی ڈراموں سے مجھے شدید بغض ہے کچھ ذیادہ ہی تفصیلی ہوتے ہیں اور مجھ سے سنے بھی نہیں جاتے۔ مگر جب کہانی سے متاثر ہو کر لگا لیا تو پتہ لگا یہ تو کورین ہی ہیں۔ کہانی پر آتے ہیں
کہانی ہے جی ہائی اسکول کے پیارے پیارے لڑکوں کی جو ایکدن بلکہ ایک رات بیٹھے روح بلا رہے ہوتے ہیں اور آجاتی ہے۔ سر انکے اسی رات بارش آتی جاتی بتی اور عجیب و غریب آوازوں کے تعاقب میں نکلے ہوتے ہیں۔ اب ہوتا یہ ہے کہ پیارے پیارے لڑکے بھاگ کے نکلتے ہیں کلاس سے اور کیا دیکھتے ہیں انکے سر لابی میں بیہوش پڑے ہیں۔
سر ہوئے زخمی پندرہ دن کیلئے اسپتال نشین اور کلاس کے لڑکوں کو ملا نیا شغل۔ اکیس لڑکوں کی کلاس ہے مگر جب کبھی کسی دوسری کلاس کے لڑکوں سے بات ہو یا کسی کھیل میں شامل ہونے کا مسلئہ ہو ایک لڑکا کم پڑ جائے۔ یعنی بیس لڑکے ہی باقی سب کو نظر آتے ہیں۔ ایک لڑکا بھوت ہے مگر کونسا؟ ہائے سب اس تلاش میں لگے اور ہار ہار کر تھک کر بیٹھے اور بھوت نکلا۔۔۔
کہانی سے سبق ملتے ہیں۔
کلاس کے مانیٹر یا پریزیڈنٹ کیلئے
اچھے گریڈز کی لالچ میں بھاگ بھاگ کے کام نہ کیا کرو سب مٹی میں مل جائے گا دوستی سے بھی ہاتھ دھو بیٹھو گے کیونکہ استاد بھی کبھی طالب علم تھا۔
نئے اسکول میں نئے طلباء کیلئے
کوئی طالب علم اسکول پہنچنے پر پہلے سے کلاس میں بیٹھا مراقبے میں گم ہو تو پہلے لاحول پڑھو پھر اس سے بات کرو کیا پتہ وہ بھوت ہو۔
ایک کمرے میں دو طلباء رہنے والوں کیلئے
رات کو نیند نہ آتی ہو تو اپنے روم میٹ کا سایہ دیکھو بنتا بھی ہے کہ نہیں۔ اگر نہ بنتا ہو تو خاموشی سے کمرہ بدل لو ۔ کیا بلا وجہ بھوت کو تنگ کرنا۔
ٹیم بنا کر فٹ بال کھیلنے والوں کیلئے۔۔

گیارہ لڑکے اکٹھے ہو تو اگلی ٹیم سے گنوا لو کیا پتہ تم میں سے ایک انہیں نظر ہی نہ آرہا ہو۔
اساتذہ کیلئے
نئی کلاس ملے تو نئے بچے کا خود سے اندراج کرنے کی بجائے اس سے کہو کہ ایڈمن سے تصدیق شدہ سلپ لیکر آئے ورنہ گھپ اندھیرے میں گرے پڑے ہوگے۔ویسے اس میں بھی فائدہ ہے۔پندرہ دن کی چھٹی جماعت کے صدر سے کتے کی طرح کام کروا کر اسکو ٹکا سا جواب دے کر ذلیل کرنے کا سنہری موقع بھی۔
ڈرائونے تھیم پر کام کرنے والوں کیلئے۔۔۔

بھائی لڑکے لڑکوں سے نہیں ڈرتے ۔ چاہے منہ پر ڈھاٹا باندھو یا سنگھار کرو۔یہ صرف لڑکیاں ہی ہوتی ہیں جو بھوتوں سے ڈرتی ہیں اور لڑکوں سے انہیں ڈرایا جاتا ہے۔اگر ڈرانے کا شوق ہے تو اصل بھوت بنو۔بس اس میں ایک قباحت ہے سب کو نظر نہیں آئو گے مگر جسکو نظر آئوگے اسے اسپتال پہنچا دوگے۔
بھوت کے دوستوں کیلئے
بھئی ویسے تو بھوت پریت سے ڈرنا چاہیئے مگر تم لوگوں کو اندازہ نہیں کہ بھوت کتنے کارآمد ہوتے ہیں۔ جب اندازہ ہوا تو انکی جماعت کا سو فیصد نتیجہ آیا۔ سو بھوت جہاں ملے جیسے ملے دوست بنا لو۔ خاص کر سکول میں کسی جماعت پر شک ہو ان میں بھوت ہے وہاں جا جا کر ڈھونڈو کیا پتہ کوئی دس سال پرانا بھوت ہو جس نے اسکول کے دس سال کے پرچے دیکھ رکھے ہوں نہیں تو دس سال سے ایک ہی جماعت میں پڑھتے پڑھتے اتنا تو لائق ہو ہی چکا ہوگا کہ تم لوگوں کو پڑھا سکے سو اس سے پڑھو اچھے گریڈز لو۔
سیکیورٹی گارڈ کیلئے
بھئ اسکول کا سیکیورٹی گارڈ ہو اور اسے اسکول کے بھوتوں کی خبر نہ ہو نا ممکن۔سو ہمیشہ بھوت کون یہ جاننے کیلئے سیکیورٹی گارڈ سے رابطہ کرو۔ کیا پتہ وہ اسکول کے لاکروں میں راکھ چھپاتا پھرا ہو۔ یہاں سیکیورٹی گارڈ کیلئے سبق ہے راکھ اسکول میں نہ چھپائو نوکری چلی گئ تو کیا کروگے؟
بھوت کیلئے۔
بھائی کسی طالب علم سے پوچھو وہ اسکول کو برا بھلا کہتا اس سے جان چھڑانے کو مررہا ہوگا اور تم ہو کہ مر کے اسکول میں پڑھنے کیلئے مرے چلے جا رہے ہو ۔ عقل کو ہاتھ مارو۔ اور جان لو انسان کمینے ہوتے ہیں۔ سچ مچ تم کمینے بھوت ہوتے تو سب تم سے ڈرتے خیال کرتے مگر تم نے بھوت ہوکر ناک کٹوائی کتے والی کروائی ڈرایا اور خود روتے پیٹتے منہ سجائے پھرے اتنا ترس آیا تم پر کہ دل کیا آل بوائز اسکول میں جا کر دوبارہ داخلہ لیکر تم سے دوستی کرلوں۔ اتنے پیارے لڑکے تھے تمہارے گرد۔ آہم۔۔۔
کوے کیلئے۔
شیشے کی کھڑکیوں میں منہ نہ مارو منہ پھٹ جائے گا۔ بلا وجہ کا تم نے خون بہایا۔ ترس آیا تم پر
ذاتی رائے۔
بہت اچھا ڈرامہ ہے۔ اتنے پیارے لڑکے اتنے پیارے لڑکے کیا بتائوں کتنے پیارے لڑکے۔اور دو تو ایک ہی شکل کے اوپر سے کان چھدوائے وے ان پر تو کئی بار گمان ہوا مجھے کہ چلو جانے دو۔ یار ویسے ایک بات بتائو لڑکیوں کی جماعت ہو تو ہم ایک دوسرے کے آباء و اجداد تک کی معلومات رکھتی ہیں تم لڑکے کیا واقعی اتنے انجان رہتے ہو ایک دوسرے سے کہ یہ بھی پتہ نہیں ہوتا کہ کون کون ہے کلاس میں۔ ویسے ہی معلومات عامہ کیلئے پوچھ رہی۔ ہم لڑکیاں تو ا سے لیکر ے تک ہر لڑکی سے گال سے گال ٹکرا کر منہ سے ٹچ ٹچ کی آواز نکال کر انسیت جتاتئ ہیں۔ تم لوگ ہو کہ بھوت اور انسان کا فرق بھی نہیں پتہ لگے اتنے دور دور رہتے ہو۔
خیر
Desi kimchi ratings: 10/5
کیا کروں اتنے پیارے لڑکے۔۔۔۔۔۔۔



Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Share Article: